مرکزی مینیو کھولیں

ویکی شیعہ β

بقعہ مبارکہ یا وادی مقدس طوی یا وادی ایمن، وہ مقام ہے جہاں خداوند عالم نے حضرت موسیؑ سے کلام کیا۔ بقعہ مبارکہ، مبارک خطہ زمین کے معنی میں ہے جس کی طرف قرآن مجید میں اشارہ ہوا ہے۔ اکثر مفسرین اس مقام کے مبارک ہونے کا سبب جناب موسی سے پروردگار عالم کے تکلم کو قرار دیتے ہیں۔ اس مقام کے مقدس ہونے کی وجہ سے خداوند عالم نے حضرت موسی کو حکم دیا کہ وہ اپنی نعلین اتار لیں۔

فہرست

اجمالی تعارف

بقعہ مبارکہ، با برکت قطعہ زمین کے معنی میں ایک قرآنی اصطلاح ہے جس کی طرف قرآنی مجید میں فقط ایک بار اشارہ کیا گیا ہے۔[1]

جب حضرت موسی علیہ السلام رات کے وقت مدین سے مصر کی طرف محو سفر تھے تو طور سنیا کی طرف سے بلند ہونے والی ایک آگ نے ان کی توجہ جلب کی اور انہوں نے اس سمت میں حرکت کی۔[2]

سورہ قصص کی ۳۰ ویں آیت کے مطابق، جب وہ اس (آتش) کے قریب پہچے تو وادی کی دائیں طرف سے (یا