مرکزی مینیو کھولیں

ویکی شیعہ β

ثِقہ علم رجال کی ایک اصطلاح ہے جو کسی راوی کے مورد اعتبار ہونے پر دلالت کرتی ہے۔ علم رجال کے بعض ماہرین کے مطابق "ثقہ" اس راوی کو کہا جاتا ہے جو امامی، عادل اور ضابط(فراموش کار نہ ہو) یعنی احادیث کو حفظ کرنے کی صلاحیت رکھتا ہو۔ اس لفظ کا استعمال مورداعتماد راویوں کو جعلی اور جھوٹے راویوں سے تمیز دینے کیلئے ہوتا ہے۔ یہ لفظ معصومین نیز ائمہ معصومین کے معاصر مُحَدِّثین کے کلام میں بھی مورد اعتماد راویوں کیلئے استعمال ہوا ہے۔

راویوں کی وثاقت اور ان کے قابل اعتبار ہونے کو ثابت کرنے کے لئے کچھ معیار ذکر ہوئے ہیں؛ من جملہ ان میں سے ایک معصومین یا علم رجال کے متقدم یا متاخر علماء میں سے کسی ایک کی زبانی کسی راوی کی وثاقت کی تصریح ہے جس کا اظہار عموما "ثقہ"، "جلیل القدر" اور "ثقۃ عین الصدوق" جیسے الفاظ کے ذریعے ہوتا تھا۔

راویوں کی وثاقت میں چہ بسا کسی ایک راوی کی توثیق کی جاتی ہے جسے علم رجال میں توثیق خاص اور کبھی راویوں کے ایک گروہ کی توثیق کی جاتی ہے جسے توثیق عام کہا جاتا ہے۔ تفسیر قمی میں تمام راویوں کی توثیق، توثیق عام کا ایک نمونہ ہے۔

فہرست

معانی

لفظ "ثقہ" علم رجال میں بہت زیادہ استعمال ہونے وال