مرکزی مینیو کھولیں

ویکی شیعہ β

تبدیلیاں

نجف

30 بائٹ کا اضافہ، 00:50، 12 فروری 2019ء
حوزہ علمیہ نجف
== حوزہ علمیہ نجف ==
{{اصلی| حوزہ علمیہ نجف}}
[[شیخ طوسی]] نے پانچویں صدی کے اوائل میں نجف کی طرف ہجرت کی اور درس و تدریس کا سلسلہ شروع کر کے اس شہر کو شیعوں کا کے ایک علمی اور ثقافتی مرکز میں تبدیل کردیا۔
شاہ عباس نے نجف کی کھوئی ہوئی علمی مرکزیت کو دبارہ زندہ کرنے اور اس کے حوزہ علمیہ کو دوبارہ رونق بخشنے کی خاطر کافی تلاش کوشش اور جد و جہد کیا کی یہاں تک کہ عثمانیوں کے ساتھ ہونے والی مذاکرات میں انہوں نے نجف کو ایران کے ساتھ ملحق کرنے کی خواہش ظاہر کی لیکن عثمانی وزیر نے کہا : "نجف کے پتھر میری نظر میں ہزار انسانوں کے برابر ہیں" <ref>ماضی النجف و حاضرہا، ج۱، ص ۲۸-۲۹</ref>
ملا احمد اردبیلی جو [[مقدس اردبیلی ]] کے نام سے مشہور ہیں، کے یہاں آنے اور ان کے درس و تدریس کے شروع ہونے سے اس علمی مرکز میں مزید رونق آگئی۔
سنہ 12 ہجری میں مرحوم [[وحید بہبہانی کی ]] کے مجلس درس کی [[کربلا]] منتقلی کے بعد حوزہ علمیہ نجف کی شہرت میں کمی آ گئی، لیکن سنہ 13 ہجری، میں مرحوم کاشف الغطاء، [[بحر العلوم ]] اور [[شیخ مرتضی انصاری ]] جیسے فقہاء اور بزرگوں کی وجہ سے حوزہ علمیہ نجف نے اپنا کھوئا کھویا ہوا وقار دوبارہ حاصل کیا اور یہاں کے علمی محافل کی رونق میں دوچنداں اضافہ ہوا۔
ایران میں [[انقلاب مشروطہ]] کے دوران، نجف میں مقیم مجتہدین جیسے [[آخوند خراسانی ]] اور [[آیت اللہ نائینی ]] اس انقلاب کے دینی اور فکری ہدایت کی ذمہ داری سنبھال اس کی صحیح سمت میں رہنمائی فرمائی۔
عراق میں بعثیوں کی حکومت کے دوران حوزہ علمیہ نجف پر شدید سختیاں عاید عائد کی گئیں لیکن اس کے با وجود یہ حوزہ باقی رہی رہا اور اب بھی، بھی [[شیعہ|اہل تشیع]] کے ایک علمی مرکز کے عنوان سے پہچانی جاتی پہچانا جاتا ہے اور اس کے مفید اثرات پوری دنیا پر نمایاں ہے۔ہیں۔
== تاریخی آثار ==
16,427
ترامیم