مرکزی مینیو کھولیں

ویکی شیعہ β

ثَمود، ایک عرب قوم کا نام ہے جو حضرت صالح پر ایمان نہ لانے کی وجہ سے عذاب الہی میں مبتلا ہوگئے تھے۔ قرآن میں ان کو ایک مشرک قوم کے طور پر یاد کیا گیا ہے۔ پتھروں سے گھر بنانا ان کی بارزترین صفات میں شمار کیا جاتا ہے۔ خدا نے حضرت صالحؑ کو ان کی ہدایت کیلئے بھیجا۔ لیکن انہوں نے اپنے نبی کے معجزے کو جو کہ ایک اونٹنی تھی اور ناقہ صالح کے نام سے مشہور تھی، مار ڈالا جس کے نتیجے میں وہ لوگ عذاب الہی میں مبتلا ہو گئے۔ قوم ثمود کی کہانی تورات میں نہیں آیا ہے لیکن ماہرین آثار قدیمہ کو ملنے والی چیزوں سے سعودی عربیہ کے شمالی حصے میں ان کی موجودگی کا پتہ چلتا ہے۔

فہرست

قرآن میں ثمود کا تذکرہ

بعض کا خیال ہے کہ "ثمود" عربی زبان کا ایک لفظ ہے جس کے معنی قلیل پانی کے ہیں۔[1] جبکہ بعض کا اس لفظ کو غیر عربی سمجھتے ہیں۔[2] ثمود ایک قبیلہ[3] یا قبیلے کے سردار کا نام [4] تھا۔ یہ لفظ قرآن میں 26 مرتبہ آیا ہے۔[5] اسی طرح بعض مفسرین کا خیال ہے کہ سورہ حجر کی آیت نمبر 80 میں اصحاب الحجر سے مراد بھی قوم ثمود ہے کیونکہ حج